urdu maloomatUrdu Tipsدلچسپصحت

ایک ایسا پھل جو خوبصورت ہونے کے ساتھ ساتھ بہت سی بیماریوں میں بھی مفید ہے

پپیتا کا شمار ان پھلوں میں ہوتا ہے، جنہیں مکمل غذا کہا جاتا ہے۔ کیونکہ یہ پھل پروٹین، معدنی اجزاء، اور مختلف وٹامنز سے بھرپور ہوتا ہے۔ جتنا زیادہ یہ پھل پکتا ہے اتنا ہی اس میں وٹامن سی بڑھتا جاتا ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق پپیتا میں بہت سارے غذائی اجزاء پائے جاتے ہیں، ایک عام اندازے کے مطابق ایک درمیانے سائز کے پپیتے میں پندرہ گرام کاربوہائڈریٹس،ایک گرام پروٹین، تینتیس فیصد وٹامن اے تین گرام فائبر، ، ایک سو ستاون فیصد وٹامن سی، گیارہ فیصد پوٹاشیم، اور چودہ فیصد وٹامن بی9 پایا جاتا ہے۔خوبصورت رنگ اور منفرد خوشبو کی بنیاد پر پپیتا کو کرسٹوفر کولمبس نے فرشتوں کا پھل کہا تھا۔ پپیتا کو کچا بھی استعمال کیا جا سکتا ہے، جب کہ کچھ افراد پکے ہوئے پپیتے کو استعمال کرنا زیادہ پسند کرتے ہیں۔ اسے کسی بھی صورت میں استعمال کیا جائے، اس کی افادیت میں کوئی کمی نہیں آتی۔

پیٹ کے کیڑوں کا خاتمہ:
طبی ماہرین کے مطابق پپیتے اور پپیتے کے بیجوں میں ایسی خصوصیات پائی جاتی ہیں جو پیٹ کے کیڑوں کو ختم کرنے میں انتہائی اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ کچھ تحقیقات کے بعد یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ 7 دن تک پپیتا اور اس کے بیج استعمال کرنے سے پیٹ کے کیڑوں کا مکمل طور پر خاتمہ ہو جاتا ہے۔

جِلد کی صحت میں بہتری:
پپیتا میں لیکوپین، کیروٹین وافر مقدار میں موجود ہوتے ہیں، جو جِلد کی صحت کو بہتر کرنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ اس کو جِلد پر لگا کر بھی اس سے بہت سے فوائد حاصل کیے جا سکتے ہیں۔پپیتے سے نکلنے والا رس سورج سے متاثرہ جِلد کو ٹھنڈا رکھنے میں اہم کردار نبھاتا ہے، اور جِلد کو نئے خلیات بنانے میں بھی مدد دیتا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ کچے پپیتا کا گودا بھی جِلد کی بہترین صفائی کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ پپیتے کی انہی خصوصیات کی بنیاد پر اسے فیس واش وغیرہ میں بھی استعمال کیا جاتا ہے۔

ہارٹ اٹیک کے خطرات میں کمی:
طبی ماہرین کے مطابق پپیتے میں ایسی غذائی اجزاء موجود ہوتے ہیں جو دل کے دورے کے خطرات کو کم کرنے میں انتہائی اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

صحت مند جگر:
منشیات کے استعمال یا غذائیت کی کمی کی وجہ سے جگر خشک ہونا شروع ہو جاتا ہے۔ جگر کے اس مرض سے چھٹکارا حاصل کرنے کے لیے پپیتے کے بیج نہایت مؤثر ثابت ہوتے ہیں۔جگر کو صحت مند بنانے کے لیے پپیتے کے بیجوں کو کچل کر اس کا ایک چائے کا چمچ جوس حاصل کر لیں اور دس قطرے تازہ لیموں کے رس میں شامل کر کے روزانہ ایک ماہ تک اس نسخے پر عمل کرنے کی وجہ سے جگر کے اس مرض کی علامات میں واضح کمی آتی ہے۔

گلے کی بیماریوں میں مفید:
گلے کے بہت سے امراض سے چھٹکارا پانے کے لیے بھی پپیتا نہایت اہم کردار ادا کرتا ہے۔ کچے پپیتے کا جوس شہد میں ملا کر گلے غدودوں، جو سوزش کا شکار ہو گئے ہوں ان پر لگانے سے خناق وغیرہ کی علامات میں کمی آ سکتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ پپیتا گلے کے انفیکشن کو بھی بڑھنے سے روکتا ہے۔

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button